noImage

میر تسکینؔ دہلوی

1803 - 1851

غزل 12

اشعار 11

جس وقت نظر پڑتی ہے اس شوخ پہ تسکیںؔ

کیا کہیے کہ جی میں مرے کیا کیا نہیں ہوتا

  • شیئر کیجیے

قاصد آیا ہے وہاں سے تو ذرا تھم تو سہی

بات تو کرنے دے اس سے دل بے تاب مجھے

  • شیئر کیجیے

شب وصال میں سننا پڑا فسانۂ غیر

سمجھتے کاش وہ اپنا نہ رازدار مجھے

  • شیئر کیجیے

کتاب 3

دیوان تسکین

 

 

انتخاب کلام

 

1970

اردو ادب،نئ دہلی

دیوان تسکین : شمارہ نمبر-003

1965

 

متعلقہ شعرا

  • مرزا غالب مرزا غالب ہم عصر
  • تعشق لکھنوی تعشق لکھنوی ہم عصر
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر ہم عصر
  • مومن خاں مومن مومن خاں مومن ہم عصر
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ ہم عصر
  • میر انیس میر انیس ہم عصر
  • شاد لکھنوی شاد لکھنوی ہم عصر
  • سخی لکھنوی سخی لکھنوی ہم عصر
  • لالہ مادھو رام جوہر لالہ مادھو رام جوہر ہم عصر
  • مصطفیٰ خاں شیفتہ مصطفیٰ خاں شیفتہ ہم عصر