غزل 12

اشعار 14

ترے تصور کی دھوپ اوڑھے کھڑا ہوں چھت پر

مرے لیے سردیوں کا موسم ذرا الگ ہے

رکھے رکھے ہو گئے پرانے تمام رشتے

کہاں کسی اجنبی سے رشتہ نیا بنائیں

یہ کاروبار محبت ہے تم نہ سمجھوگے

ہوا ہے مجھ کو بہت فائدہ خسارے میں

کتاب 1

 

آڈیو 7

تمہارے عالم سے میرا عالم ذرا الگ ہے

خوبیوں کو مسخ کر کے عیب جیسا کر دیا

سچ یہی ہے کہ بہت آج گھن آتی ہے مجھے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"اورنگ آباد" کے مزید مصنفین

  • منہاج نقیب منہاج نقیب