Jazib Quraishi's Photo'

جاذب قریشی

1940 | کراچی, پاکستان

غزل 21

اشعار 9

کیوں مانگ رہے ہو کسی بارش کی دعائیں

تم اپنے شکستہ در و دیوار تو دیکھو

تیری یادوں کی چمکتی ہوئی مشعل کے سوا

میری آنکھوں میں کوئی اور اجالا ہی نہیں

  • شیئر کیجیے

دفتر کی تھکن اوڑھ کے تم جس سے ملے ہو

اس شخص کے تازہ لب و رخسار تو دیکھو

مری شاعری میں چھپ کر کوئی اور بولتا ہے

سر آئنہ جو دیکھوں تو وہ شخص دوسرا ہے

  • شیئر کیجیے

دیکھ لے ذرا آ کر آنسوؤں کے آئینے

میں سجا کے پلکوں پر تیرا پیار لایا ہوں

  • شیئر کیجیے

کتاب 4

شاعری اور تہذیب

 

1988

شناسائی

 

1973

شنا سائی

 

1984

شیشے کا درخت

 

1991

 

"کراچی" کے مزید شعرا

  • جون ایلیا جون ایلیا
  • پروین شاکر پروین شاکر
  • آرزو لکھنوی آرزو لکھنوی
  • سلیم احمد سلیم احمد
  • سجاد باقر رضوی سجاد باقر رضوی
  • انور شعور انور شعور
  • محسن احسان محسن احسان
  • دلاور فگار دلاور فگار
  • عذرا عباس عذرا عباس
  • پیرزادہ قاسم پیرزادہ قاسم