عبید حارث

غزل 6

اشعار 9

اپنا سچ اس کو سنانے کے لیے

ہم کو قصوں کا حوالہ چاہیئے

  • شیئر کیجیے

تہہ بہ تہہ کھلتی ہی رہتی ہے سدا

میرؔ کے دیوان سی ہے زندگی

  • شیئر کیجیے

وقت بدلا سوچ بدلی بات بدلی

ہم سے بچے کہہ رہے ہیں ہم نئے ہیں

  • شیئر کیجیے

نیا چار دن میں پرانا ہوا

یہی سب ہوا تو نیا کیا ہوا

  • شیئر کیجیے

ہم کتابوں میں جسے پاتے ہیں حارثؔ

آدمی ویسا کوئی ملتا کہاں ہے

  • شیئر کیجیے

کتاب 3

 

متعلقہ شعرا

"مہاراشٹر" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے