عبد الحمید

غزل 12

اشعار 12

فلک پر اڑتے جاتے بادلوں کو دیکھتا ہوں میں

ہوا کہتی ہے مجھ سے یہ تماشا کیسا لگتا ہے

دن گزرتے ہیں گزرتے ہی چلے جاتے ہیں

ایک لمحہ جو کسی طرح گزرتا ہی نہیں

لوٹ گئے سب سوچ کے گھر میں کوئی نہیں ہے

اور یہ ہم کہ اندھیرا کر کے بیٹھ گئے ہیں

یہ قید ہے تو رہائی بھی اب ضروری ہے

کسی بھی سمت کوئی راستہ ملے تو سہی

لوگوں نے بہت چاہا اپنا سا بنا ڈالیں

پر ہم نے کہ اپنے کو انسان بہت رکھا

کتاب 6

حرف و حکایت

 

1956

انقلاب ہند اور مسلمان

 

 

نور کامل

 

 

تین سندیش

 

 

امت کی مائیں

 

1955

 

آڈیو 12

ابھی ساز_دل میں ترانے بہت ہیں

اسے دیکھ کر اپنا محبوب پیارا بہت یاد آیا

ایک خدا پر تکیہ کر کے بیٹھ گئے ہیں

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"الہٰ آباد" کے مزید شعرا

  • آنند نرائن ملا آنند نرائن ملا
  • افضل الہ آبادی افضل الہ آبادی
  • فراق گورکھپوری فراق گورکھپوری
  • شبنم نقوی شبنم نقوی
  • خواجہ جاوید اختر خواجہ جاوید اختر
  • ظفر انصاری ظفر ظفر انصاری ظفر
  • ساحل احمد ساحل احمد
  • سہیل احمد زیدی سہیل احمد زیدی
  • احترام اسلام احترام اسلام
  • اکبر الہ آبادی اکبر الہ آبادی