Akbar Allahabadi's Photo'

اکبر الہ آبادی

1846 - 1921 | الہٰ آباد, ہندوستان

اردو میں طنز و مزاح کے سب سے بڑے شاعر ، الہ آباد میں سیشن جج تھے

اردو میں طنز و مزاح کے سب سے بڑے شاعر ، الہ آباد میں سیشن جج تھے

غزل 70

نظم 5

 

اشعار 121

ہم آہ بھی کرتے ہیں تو ہو جاتے ہیں بد نام

وہ قتل بھی کرتے ہیں تو چرچا نہیں ہوتا

I do suffer slander, when I merely sigh

she gets away with murder, no mention of it nigh

I do suffer slander, when I merely sigh

she gets away with murder, no mention of it nigh

عشق نازک مزاج ہے بے حد

عقل کا بوجھ اٹھا نہیں سکتا

  • شیئر کیجیے

آئی ہوگی کسی کو ہجر میں موت

مجھ کو تو نیند بھی نہیں آتی

  • شیئر کیجیے

رباعی 51

قطعہ 5

 

مزاحیہ 3

 

لطیفے 8

ای- کتاب 60

اکبر الہ بادی

تحقیقی و تنقیدی مطالعہ

2003

اکبرالہ آبادی

 

1931

اکبر الہ آبادی

 

1983

اکبر الہ آبادی

ایک سماجی و سیاسی مطالعہ

1977

اکبر الہ آبادی اور ان کا کلام

 

1964

اکبر الہ آبدی اور ان کا کلام

 

1964

اکبر الہ آبادی کے لطیفے

 

1954

اکبر الٰہ آبادی: ایک سماجی و سیاسی مطالعہ

 

2011

اکبر اس دور میں

 

1952

اکبر نامہ یا اکبر میری نظر میں

 

1954

تصویری شاعری 12

کچھ طرز_ستم بھی ہے کچھ انداز_وفا بھی کھلتا نہیں حال ان کی طبیعت کا ذرا بھی

عشوہ بھی ہے شوخی بھی تبسم بھی حیا بھی ظالم میں اور اک بات ہے اس سب کے سوا بھی

آئی ہوگی کسی کو ہجر میں موت مجھ کو تو نیند بھی نہیں آتی

عشوہ بھی ہے شوخی بھی تبسم بھی حیا بھی ظالم میں اور اک بات ہے اس سب کے سوا بھی

ہر ایک سے سنا نیا فسانہ ہم نے دیکھا دنیا میں ایک زمانہ ہم نے اول یہ تھا کہ واقفیت پہ تھا ناز آخر یہ کھلا کہ کچھ نہ جانا ہم نے

رحمان کے فرشتے گو ہیں بہت مقدس شیطان ہی کی جانب لیکن مجارٹی ہے

آئی ہوگی کسی کو ہجر میں موت مجھ کو تو نیند بھی نہیں آتی

عشق نازک_مزاج ہے بے_حد عقل کا بوجھ اٹھا نہیں سکتا

ویڈیو 12

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
دیگر ویڈیو
kahen kisse kissa e dard o gham

نیرہ نور

آم_نامہ

نامہ نہ کوئی یار کا پیغام بھیجئے Urdu Studio

آہ جو دل سے نکالی جائے_گی

نامعلوم

برق_کلیسا

نامعلوم

دل مرا جس سے بہلتا کوئی ایسا نہ ملا

نامعلوم

دنیا میں ہوں دنیا کا طلب_گار نہیں ہوں

کندن لال سہگل

غمزہ نہیں ہوتا کہ اشارا نہیں ہوتا

نامعلوم

ہنگامہ ہے کیوں برپا تھوڑی سی جو پی لی ہے

منجری

ہنگامہ ہے کیوں برپا تھوڑی سی جو پی لی ہے

رنجیت رجواڑا

ہنگامہ ہے کیوں برپا تھوڑی سی جو پی لی ہے

امانت علی خان

آڈیو 21

آنکھیں مجھے تلووں سے وہ ملنے نہیں دیتے

پھر گئی آپ کی دو دن میں طبیعت کیسی

ختم کیا صبا نے رقص گل پہ نثار ہو چکی

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

شعرا متعلقہ

  • شاد عظیم آبادی شاد عظیم آبادی ہم عصر

شعرا کے مزید "الہٰ آباد"

  • میر اثر میر اثر
  • میر تقی میر میر تقی میر
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • میر انیس میر انیس
  • مومن خاں مومن مومن خاں مومن
  • مرزا غالب مرزا غالب
  • فراق گورکھپوری فراق گورکھپوری
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ
  • شمشیر بہادر سنگھ شمشیر بہادر سنگھ
  • شاہ نصیر شاہ نصیر