فرائیڈ کا نظریہ جنس

شیر محمد اختر, اختر رضی

ادارہ ادبیات جدید، لاہور
| مزید

کتاب: تعارف

تعارف

سگمنڈ فرائڈ بابائے تحلیلِ نفسی مانے جاتے ہیں۔ ماہرِ نفسیات بننے سے پہلے وہ ایک ڈاکٹر تھے۔ ان کی انسانی لاشعور میں دلچسپی اس وقت پیدا ہوئی جب ان کے والد کا 1896 میں انتقال ہوا۔ اگلے تین سال تک فرائڈ اپنے خوابوں کا تجزیہ کرتے رہے اور 1900 میں انہوں نے اپنی مشہور کتاب interpretations of dreams لکھی جو نفسیات کی تاریخ میں ایک سنگِ میل کی حیثیت رکھتی ہے۔ وہ کتاب تخلیق کرتے وقت فرائڈ کی عمر چالیس برس تھی۔ فرائیڈ سے قبل جنس سے متعلق مختلف مفکرین کی مختلف آرا ء موجود تھیں جن میں ایک بات مشترک تھی کہ جنسی جبلت کا اظہار بلوغت کے زمانے میں ہوتاہے جبکہ بچپن میں یہ جبلت مفقود ہوتی ہے ۔ دوسرا جنسی رغبت کی شدت جوعنفوان شباب میں رونما ہوتی ہے اور دونوں مخالف جنسوں کو بے قابو کر دیتی ہے اسی کا نتیجہ یہ بھی خیال کیا جاتا ہے کہ اس جبلت کا مقصد صرف جنسی ملاپ یا ایسے افعال ہیں جو اس ملاپ کی طرف رہنمائی کریں ۔اس لیے ہم کہہ سکتے ہیں کہ فرائیڈ سے قبل "جنس" سے مراد صرف اور صرف اس مخصوص کار کردگی کو لیا جاتا تھا جس کا بنیادی اور مرکزی نقطہ ‘‘جنسی فعل’’ تھا۔ تاہم فرائیڈ نے ‘‘تحلیل نفسی’’ کے توسط سے سابقہ نظریات کو رد کیا ہے۔ فرائیڈ نے تجزیہ نفس کے توسط سے جنس کے مسئلے پر ایک نئے زاویے سے روشنی ڈالی ہے۔ عام لوگ جنسی مسائل میں محض لذت اندوزی کے لیے دلچسپی کا اظہار کر تے رہے ۔جنس کو محض جبلی تسکین کا ذریعہ سمجھا جا تارہا اس کے برعکس فرائیڈ نے جن حقائق کو تحقیق کے بعد منظر عام پر لایا وہ اتنے تلخ اور الم ناک ہیں کہ عام آدمی ان کے متعلق سوچ بھی نہیں سکتا ۔زیر نظر کتاب میں فرائڈ کے اسی نظریہ سے بحث کی گئی ہے۔

.....مزید پڑھئے

مصنف کی مزید کتابیں

مزید

مقبول و معروف

مزید

کتابوں کی تلاش بہ اعتبار

کتابیں : بہ اعتبار موضوع

شاعری کی کتابیں

رسالے

کتاب فہرست

مصنفین کی فہرست

یونیورسٹی اردو نصاب