Agha Hashr Kashmiri's Photo'

آغا حشر کاشمیری

1879 - 1935 | لاہور, پاکستان

ممتاز ترین ڈرامہ نویس اور شاعر، جن کی تحریروں نے اردو میں ڈرامہ نویسی کو ایک مستحکم روایت کے طور پر رائج کیا

ممتاز ترین ڈرامہ نویس اور شاعر، جن کی تحریروں نے اردو میں ڈرامہ نویسی کو ایک مستحکم روایت کے طور پر رائج کیا

آغا حشر کاشمیری

غزل 5

 

اشعار 9

یہ کھلے کھلے سے گیسو انہیں لاکھ تو سنوارے

مرے ہاتھ سے سنورتے تو کچھ اور بات ہوتی

گویا تمہاری یاد ہی میرا علاج ہے

ہوتا ہے پہروں ذکر تمہارا طبیب سے

یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں

بھولنے والے کبھی تجھ کو بھی یاد آتا ہوں میں

  • شیئر کیجیے

سب کچھ خدا سے مانگ لیا تجھ کو مانگ کر

اٹھتے نہیں ہیں ہاتھ مرے اس دعا کے بعد

  • شیئر کیجیے

گو ہوائے گلستاں نے مرے دل کی لاج رکھ لی

وہ نقاب خود اٹھاتے تو کچھ اور بات ہوتی

کتاب 48

ویڈیو 8

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
دیگر

مختار بیگم

مختار بیگم

چوری کہیں کھلے نہ نسیم_بہار کی

فریدہ خانم

تم اور فریب کھاؤ بیان_رقیب سے

مختار بیگم

چوری کہیں کھلے نہ نسیم_بہار کی

مختار بیگم

سوئے_مے_کدہ نہ جاتے تو کچھ اور بات ہوتی

فریدہ خانم

یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں

علی سیٹھی

یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں

مختار بیگم

"لاہور" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے