Sajjad Baqar Rizvi's Photo'

سجاد باقر رضوی

1928 - 1993 | کراچی, پاکستان

غزل 57

اشعار 16

ٹوٹ پڑتی تھیں گھٹائیں جن کی آنکھیں دیکھ کر

وہ بھری برسات میں ترسے ہیں پانی کے لیے

میں ہم نفساں جسم ہوں وہ جاں کی طرح تھا

میں درد ہوں وہ درد کے عنواں کی طرح تھا

پہلے چادر کی ہوس میں پاؤں پھیلائے بہت

اب یہ دکھ ہے پاؤں کیوں چادر سے باہر آ گیا

کیا کیا نہ ترے شوق میں ٹوٹے ہیں یہاں کفر

کیا کیا نہ تری راہ میں ایمان گئے ہیں

ہمارے دم سے ہے روشن دیار فکر و سخن

ہمارے بعد یہ گلیاں دھواں دھواں ہوں گی

کتاب 2

غالب ذاتی تاثرات کے آئینے میں

 

1969

مغربی تنقید کے اصول

 

1985

 

مزید دیکھیے

متعلقہ شعرا

  • فہیم اعظمی فہیم اعظمی بھائی

"کراچی" کے مزید شعرا

  • جون ایلیا جون ایلیا
  • آرزو لکھنوی آرزو لکھنوی
  • سلیم احمد سلیم احمد
  • سیماب اکبرآبادی سیماب اکبرآبادی
  • سلیم کوثر سلیم کوثر
  • انور شعور انور شعور
  • محسن احسان محسن احسان
  • شبنم شکیل شبنم شکیل
  • عذرا عباس عذرا عباس
  • قمر جلالوی قمر جلالوی