Jamal Ehsani's Photo'

جمال احسانی

1951 - 1998 | کراچی, پاکستان

اہم ترین ما بعد جدید پاکستانی شاعروں میں سے ایک، اپنے انفرادی شعری تجربے کے لیے معروف

اہم ترین ما بعد جدید پاکستانی شاعروں میں سے ایک، اپنے انفرادی شعری تجربے کے لیے معروف

جمال احسانی

غزل 46

اشعار 28

یاد رکھنا ہی محبت میں نہیں ہے سب کچھ

بھول جانا بھی بڑی بات ہوا کرتی ہے

اس نے بارش میں بھی کھڑکی کھول کے دیکھا نہیں

بھیگنے والوں کو کل کیا کیا پریشانی ہوئی

قرار دل کو سدا جس کے نام سے آیا

وہ آیا بھی تو کسی اور کام سے آیا

تمام رات نہایا تھا شہر بارش میں

وہ رنگ اتر ہی گئے جو اترنے والے تھے

جمالؔ ہر شہر سے ہے پیارا وہ شہر مجھ کو

جہاں سے دیکھا تھا پہلی بار آسمان میں نے

کتاب 2

 

ویڈیو 14

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر

جمال احسانی

جمال احسانی

جمال احسانی

جمال احسانی

جمال احسانی

جمال احسانی

جمال احسانی

Jamal Ehsani reciting at a mushaira

جمال احسانی

جمال احسانی

ایک فقیر چلا جاتا ہے پکی سڑک پر گاؤں کی

جمال احسانی

چراغ سامنے والے مکان میں بھی نہ تھا

جمال احسانی

وہ لوگ میرے بہت پیار کرنے والے تھے

جمال احسانی

کسی بھی دشت کسی بھی نگر چلا جاتا

جمال احسانی

متعلقہ شعرا

"کراچی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے