50 معروف ترین نظمیں

50معروف ترین نظموں کا انتخاب : ریختہ کی خصوصی پیش کش

42K
Favorite

باعتبار

مجھ سے پہلی سی محبت مری محبوب نہ مانگ

مجھ سے پہلی سی محبت مری محبوب نہ مانگ

فیض احمد فیض

دستور

دیپ جس کا محلات ہی میں جلے

حبیب جالب

آوارہ

شہر کی رات اور میں ناشاد و ناکارا پھروں

اسرار الحق مجاز

تاج محل

تاج تیرے لیے اک مظہر الفت ہی سہی

ساحر لدھیانوی

رقیب سے!

آ کہ وابستہ ہیں اس حسن کی یادیں تجھ سے

فیض احمد فیض

ایک آرزو

دنیا کی محفلوں سے اکتا گیا ہوں یا رب

علامہ اقبال

الاؤ

رات بھر سرد ہوا چلتی رہی

گلزار

تنہائی

پھر کوئی آیا دل زار نہیں کوئی نہیں

فیض احمد فیض

وصال کی خواہش

کہہ بھی دے اب وہ سب باتیں

منیر نیازی

دائرہ

روز بڑھتا ہوں جہاں سے آگے

کیفی اعظمی

فرمان خدا

اٹھو مری دنیا کے غریبوں کو جگا دو

علامہ اقبال

آدمی نامہ

دنیا میں پادشہ ہے سو ہے وہ بھی آدمی

نظیر اکبرآبادی

آخری دن کی تلاش

خدا نے قرآن میں کہا ہے

محمد علوی

بنجارہ نامہ

ٹک حرص و ہوا کو چھوڑ میاں مت دیس بدیس پھرے مارا

نظیر اکبرآبادی

مسجد قرطبہ

سلسلۂ روز و شب نقش گر حادثات

علامہ اقبال

ڈپریشن

کوئی حادثہ

محمد علوی

بارہواں کھلاڑی

خوش گوار موسم میں

افتخار عارف

او دیس سے آنے والے بتا

او دیس سے آنے والا ہے بتا

اختر شیرانی

سمندر کا بلاوا

یہ سرگوشیاں کہہ رہی ہیں اب آؤ کہ برسوں سے تم کو بلاتے بلاتے مرے

میراجی

میں اور میرا خدا

لاکھوں شکلوں کے میلے میں تنہا رہنا میرا کام

منیر نیازی

ایک لڑکا

دیار شرق کی آبادیوں کے اونچے ٹیلوں پر

اختر الایمان

چارہ گر

اک چنبیلی کے منڈوے تلے

مخدومؔ محی الدین

میرا سفر

''ہمچو سبزہ بارہا روئیدہ ایم''

علی سردار جعفری

محبت کا جنم دن

آج محبت کا جنم دن ہے

ذیشان ساحل

کسان

جھٹپٹے کا نرم رو دریا شفق کا اضطراب

جوشؔ ملیح آبادی

صدا بصحرا

چاروں سمت اندھیرا گھپ ہے اور گھٹا گھنگھور

منیر نیازی

چاند کا قرض

ہمارے آنسوؤں کی آنکھیں بنائی گئیں

سارا شگفتہ

خواب کا در بند ہے

میرے لیے رات نے

شہریار

میں اور شہر

سڑکوں پہ بے شمار گل خوں پڑے ہوئے

منیر نیازی

والد کے انتقال پر

وہ چالیس راتوں سے سویا نہ تھا

عادل منصوری

توسیع شہر

بیس برس سے کھڑے تھے جو اس گاتی نہر کے دوار

مجید امجد

ایک نظم

چھٹپٹے کے غرفے میں

احمد ندیم قاسمی

انتقام

اس کا چہرہ، اس کے خد و خال یاد آتے نہیں

ن م راشد

سبا ویراں

سلیماں سر بہ زانو اور سبا ویراں

ن م راشد

کون دیکھے گا

جو دن کبھی نہیں بیتا وہ دن کب آئے گا

مجید امجد

شاعری میں نے ایجاد کی

کاغذ مراکشیوں نے ایجاد کیا

افضال احمد سید

طوائف

اپنی فطرت کی بلندی پہ مجھے ناز ہے کب

معین احسن جذبی

تخلیق

ایک زنگ آلودہ

محمد علوی

ازل ۔ابد

اپنا تو ابد ہے کنج مرقد

عزیز قیسی

ابال

یہ ہانڈی ابلنے لگی

عمیق حنفی

سڑک بن رہی ہے

مئی کے مہینے کا مانوس منظر

سلام ؔمچھلی شہری