Jameeluddin Aali's Photo'

جمیل الدین عالی

1925 - 2015 | کراچی, پاکستان

اپنے دوہوں کے لیے مشہور

اپنے دوہوں کے لیے مشہور

جمیل الدین عالی

غزل 42

نظم 5

 

اشعار 9

تیرے خیال کے دیوار و در بناتے ہیں

ہم اپنے گھر میں بھی تیرا ہی گھر بناتے ہیں

بکھیرتے رہو صحرا میں بیج الفت کے

کہ بیج ہی تو ابھر کر شجر بناتے ہیں

اجنبیوں سے دھوکے کھانا پھر بھی سمجھ میں آتا ہے

اس کے لیے کیا کہتے ہو وہ شخص تو دیکھا بھالا تھا

کچھ چھوٹے چھوٹے دکھ اپنے کچھ دکھ اپنے عزیزوں کے

ان سے ہی جیون بنتا ہے سو جیون بن جائے گا

ایک عجیب راگ ہے ایک عجیب گفتگو

سات سروں کی آگ ہے آٹھویں سر کی جستجو

دوہا 21

ہر اک بات میں ڈالے ہے ہندو مسلم کی بات

یہ نا جانے الھڑ گوری پریم ہے خود اک ذات

  • شیئر کیجیے

اردو والے ہندی والے دونوں ہنسی اڑائیں

ہم دل والے اپنی بھاشا کس کس کو سکھلائیں

  • شیئر کیجیے

عالؔی اب کے کٹھن پڑا دیوالی کا تیوہار

ہم تو گئے تھے چھیلا بن کر بھیا کہہ گئی نار

  • شیئر کیجیے

ساجن ہم سے ملے بھی لیکن ایسے ملے کہ ہائے

جیسے سوکھے کھیت سے بادل بن برسے اڑ جائے

  • شیئر کیجیے

نیند کو روکنا مشکل تھا پر جاگ کے کاٹی رات

سوتے میں آ جاتے وہ تو نیچی ہوتی بات

  • شیئر کیجیے

کتاب 150

تصویری شاعری 4

 

ویڈیو 25

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر

جمیل الدین عالی

جمیل الدین عالی

جمیل الدین عالی

Aali recites his ghazal "Gilla Nahin Jo Be Da Nawar Guzre Hein"

جمیل الدین عالی

Aali recites his Ghazal "Tou Kiya Wo Humko Herr Ik Jurm Ki Saza De Ga"

جمیل الدین عالی

Aalijee recites his ghazal he wrote in 1980 for his wife Tayyaba on their 67th wedding anniversary on 30th September-2011

جمیل الدین عالی

At a mushaira

جمیل الدین عالی

Great doha in Aali sahib's unique style.

جمیل الدین عالی

Jameeluddin Aali in Houston-2000

جمیل الدین عالی

Jameeluddin Aali in Houston-2000(Jeevay Pakistan)

جمیل الدین عالی

Jamil-uddin Aali - Doaha aur Ghazal

جمیل الدین عالی

Jamiluddin Aali 20 Jan-X.AVI

جمیل الدین عالی

Jamiluddin Aali in Mehfil e Mushaira held at Michigan, USA

جمیل الدین عالی

Jamiluddin Aali Recites His CLASSIC Ghazal of 1978

جمیل الدین عالی

Reciting own poetry

جمیل الدین عالی

"کراچی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے